Advertisement

Find Us On FB

Tags

urdu news
Latest News
Malakand News
bbc News
peshawar news
Dharna news
imran khan news
geo news
ary news
swat news

Advertisement

News Detail

Publisher Name : Gohar ali Gohar (Comments) Date : 2016-12-06

میزارہ بٹ خیلہ کے عوام نے 1998 میںساٹھ لاکھ روپے کا منصوبہ صرف چار لاکھ روپے میں مکمل کیا، چھ مہینے کا کام دس دن میں مکمل کرکے مثال قائم کردی۔

میزارہ بٹ خیلہ جوکہ نہر اپر کنال سوات کی دوسری جانب ہے علاقہ مکینوں نے مین روڈ تک پہنچنے کے لئے نہر اپر کنال پر پل بنانے کا مطالبہ کیا جس پر محکمہ ایریگیشن نے اسٹیمیٹ لگاکر تخمینہ لاگت کا اندازہ 59 لاکھ روپے لگایا جبکہ منصوبہ کی تکمیل کے لے نہر کو چھ مہینے تک بند کرنے کی تجویز دی ۔جس کی وجہ سے حکومت نے منصوبہ کو ملتوی کردیا۔ میزارہ کے مکینوں جمعدار بابا، شمندروز لالا، زاہد خان ، نیک محمد ، امیر باچا اور دیگر عوام نے پُل کی تعمیر کو اپنے لئے چلینج قبول کرکے محکمہ ایریگیشن سے اپنی مدد اپ کے تحت پُل کی تعمیر کی اجازت لی ۔ علاقہ کے عوام نے چندہ اکٹھا کرکے نہر اپر کنال سوات میںصفائی کے لئے پانی بند ہونے کے موقع پر پُل کی تعمیر کا اغاز کردیا ۔ جس پر محکمہ ایریگیشن ملاکنڈ نے ان کے خلاف اے اپی اے بٹ خیلہ جہانگیر خان کے عدالت میں کیس درج کرکے موقف اپنا یا کہ علاقہ کے عوام دس دنوں میں پُل تعمیر نہیںکریگا اس لئے پُل کی تعمیر کو رکوایا جائے اے پی اے نے میزارہ کے مشران کو اپنے افس بلاکر انہوںنے تحریری معاہدہ کیا کہ دس دنوں میں وہ کام مکمل کریں گے اگر کام نہیں ہوا تو محکمہ انہار بے شک پانی چھوڑ کر انہیں کوئی اعتراض نہیں ہوگا،علاقہ کے عوام نے بیوی بچوںسمیت دن رات ایک کرکے پُل کی تعمیر پر کام شرو ع کردیا کھودائی میںنوجوانوں ، مردوں سمیت خواتین اور بچوںنے بھی حصہ لیا ۔ پل کی تعمیر کے لئے چندہ کے دوران بعض خواتین نے اپنی زیوارت تک جمع کرائی ، پُل کی تعمیر کے دوران تعمیر ہونے والے ستون âپیلرá کا چائینہ انجنئیرز کے ذریعے معائینہ کیا گیا جنہوںنے اسے درست قرار دیا اور آکر خار علاقہ عوام نے اپنی مدد اپ کے تحت چھ مہینوں کا کام صرف دنوں دنوں میںمکمل کرکے ریکارڈ قائم کردیا ۔ 1998 میں اپنی مدد اپ کے تحت تعمیر ہونے والا پُل اب تک درست حالت میں ہے جس پر چھوٹے گاڑیاں پاس ہورہی ہیں جبکہ بڑے گاڑیوں ٹرک، ٹریکٹر وغیرہ سے محفوظ رہنے کےلئے پُل کے درمیان میںرکاؤٹیں دال دی گئی ہے پل کو تکمیل تک پہنچانے والے امیر باچا کے مطابق پل کی لمبائی 120 فٹ اور چھوڑائی دس فٹ ہے جس کا تخمینہ لاگت چار لاکھ بارہ ہزار روپے ہے پل کی مرمت اور رنگ روغن کا کام اب بھی علاقہ کے مکین اپنی مدد اپ کے تحت کررہے ہیں جوکہ اپنی مدد اپ کے تحت ناممکن کو ممکن بنانے کا بہترین مثال ہے ۔